مشہور پاکستانی اداکارہ نے اپنی جنسی زیادتی کی کہانی سوشل میڈیا پر شئیر کر دی

پاکستانی گلوکارہ میشا شافی کے بعد بہت سی لڑکیوں نے اپنے ساتھ ہونے والی جنسی زیادتیوں کی کہانیاں سوشل میڈیا پر شئیر کرنا شروع کر دی ہیں. اسکے علاوہ کچھ نامور پاکستانی اداکارائیں بھی اپنے ماضی کے واقعات لے کر میڈیا میں آئیں ہیں جن میں ایک معروف اداکارہ ارمینہ رانا خان بھی ہیں. اداکارہ ارمینہ رانا خان نے لاہور انارکلی بازار میں اپنے ساتھ ہونے والی جنسی زیادتی کا واقعہ سوشل میڈیا پر شیئر کیا ہے. تفصیل اس پوسٹ میں پڑھیں.

مائیکرو بلاگنگ ویب سائٹ ٹوئٹر پر بیان دیتے ہوئے انہوں نے کہا کہ ”میں لاہور کے معروف بازار انار کلی میں برقع پہن کر گئی ،کوئی نہیں جانتا تھا کہ میں کون ہوں ،اسی دوران وہاں ایک شخص نے میری چھاتی پکڑ لی اور دوسرے نے پشت پر ہاتھ پھیرا،یہ سب میری فیملی نے بھی دیکھا اور میں نے ان لڑکوں سے پوچھا کہ انہوں نے ایسا کیوں کیا ،مجھے بتا یا گیا کہ انار کلی میں یہ ایک عام بات ہے ،کیا میں اس سلوک کی مستحق تھی ؟“. انہوں نے کہا کہ جنسی ہراسگی کا شکار لوگ انصاف کا حق رکھتے ہیں ،کپڑے اور پیشہ ور افراد اس حوالے سے کچھ نہیں کر سکتے،اگر کپڑوں سے کوئی فرق پڑتا ہو تو پھر چھوٹی بچیاں زیادتی کا نشانہ بننے کے بعد قتل نہ ہوں کیونکہ وہ ابھی بڑی نہیں ہوئیں .

ارمینا خان نے لوگوں کو مخاطب کرتے ہوئے کہا کہ سلیبرٹی اور کپڑوں کی دلیل سے باہر نکل آﺅ ،مارکیٹوں میں کتنی ہی عام خواتین کے ساتھ جنسی ہراسگی کے واقعات پیش آتے ہیں ،ان میں سے بہت سی لڑکیاں شرم کی وجہ سے سامنے نہیں آتیں لیکن یہ لمحہ ان لڑکیوں کے لیے سنہری موقع ہے ،یہ اب جنسی خواتین کا شکار ہونے والی خواتین پر منحصر ہے کہ وہ اس بارے میں بات کرتی ہیں یا نہیں . اداکارہ نے کہا کہ میں نے اپنی کہانی ہمدردی حاصل کرنے کے لیے بیان نہیں کی ،میں نے عام لڑکیو ں کے ساتھ پیش آنے والے اپنے تجربے کو بیان کیا ہے ،چناچہ دوسری لڑکیاں بھی اب بول سکتی ہیں .

آپ کیا سمجھتے ہیں یہ سب الزامات اور کہانیاں سچی ہیں یا پھر اداکارائیں یہ سب کچھ مقبولیت حاصل کرنے کے لیے کر رہی ہیں؟ ویسے فنکاروں کے بارے میں یہ کہا جاتا ہے کہ یہ لوگ مقبولیت حاصل کرنے یا بڑھانے کے لیے کسی حد تک بھی جا سکتے ہیں، مثلا ً جان بوجھ کر چھوٹے کپڑے پہننا تاکے زیادہ سے زیادہ لوگوں کی نظر ان پر پڑے، ریمپ پر چلتے هوئے جان بوجھ کر پھسل جانا، پارٹی میں اوچھی حرکات وغیرہ کرنا تاکہ میڈیا کی نظر ان پر جائے. اور مزے کی بات یہ ہے کہ میشا شافی کے علی ظفر پر الزامات کے بعد آج کل انکے ٹویٹر اکاؤنٹ پر روزانہ کی بنیاد پر 40-30 نئے فلورز آرہے ہیں ؛)

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *